ایران کا دعویٰ ہے کہ امریکی لڑاکا طیارے 'خطرے سے دوچار' مہان ایئر مسافر بردار طیارے کے

ہمیں پڑھیں | ہماری بات سنو | ہمیں دیکھو |تقریبات| سبسکرائب کریں ہمارا سوشل میڈیا۔|


Afrikaans Afrikaans Albanian Albanian Amharic Amharic Arabic Arabic Armenian Armenian Azerbaijani Azerbaijani Basque Basque Belarusian Belarusian Bengali Bengali Bosnian Bosnian Bulgarian Bulgarian Cebuano Cebuano Chichewa Chichewa Chinese (Simplified) Chinese (Simplified) Corsican Corsican Croatian Croatian Czech Czech Dutch Dutch English English Esperanto Esperanto Estonian Estonian Filipino Filipino Finnish Finnish French French Frisian Frisian Galician Galician Georgian Georgian German German Greek Greek Gujarati Gujarati Haitian Creole Haitian Creole Hausa Hausa Hawaiian Hawaiian Hebrew Hebrew Hindi Hindi Hmong Hmong Hungarian Hungarian Icelandic Icelandic Igbo Igbo Indonesian Indonesian Italian Italian Japanese Japanese Javanese Javanese Kannada Kannada Kazakh Kazakh Khmer Khmer Korean Korean Kurdish (Kurmanji) Kurdish (Kurmanji) Kyrgyz Kyrgyz Lao Lao Latin Latin Latvian Latvian Lithuanian Lithuanian Luxembourgish Luxembourgish Macedonian Macedonian Malagasy Malagasy Malay Malay Malayalam Malayalam Maltese Maltese Maori Maori Marathi Marathi Mongolian Mongolian Myanmar (Burmese) Myanmar (Burmese) Nepali Nepali Norwegian Norwegian Pashto Pashto Persian Persian Polish Polish Portuguese Portuguese Punjabi Punjabi Romanian Romanian Russian Russian Samoan Samoan Scottish Gaelic Scottish Gaelic Serbian Serbian Sesotho Sesotho Shona Shona Sindhi Sindhi Sinhala Sinhala Slovak Slovak Slovenian Slovenian Somali Somali Spanish Spanish Sudanese Sudanese Swahili Swahili Swedish Swedish Tajik Tajik Tamil Tamil Thai Thai Turkish Turkish Ukrainian Ukrainian Urdu Urdu Uzbek Uzbek Vietnamese Vietnamese Xhosa Xhosa Yiddish Yiddish Zulu Zulu
ایران نے امریکی لڑاکا طیاروں پر مہان ایئر مسافر بردار طیارے کو خطرے میں ڈالنے کا الزام عائد کیا
ایران نے امریکی لڑاکا طیاروں پر مہان ایئر مسافر بردار طیارے کو خطرے میں ڈالنے کا الزام عائد کیا
تصنیف کردہ ہیری ایس جانسن
ایرانی میڈیا کا دعوی ہے کہ امریکی فضائیہ کے لڑاکا طیاروں نے ایران کو 'غیر محفوظ طریقے سے روکا' تھا مہان ایئر تہران سے بیروت جانے والے مسافر بردار طیارے نے متعدد مسافروں کو 'زخمی' کردیا۔ اس سے قبل ایرانی عہدیداروں نے شام کے اس واقعے کو اسرائیلی فوجی طیارے پر ذمہ دار ٹھہرایا تھا۔

مہان ایئر کی فلائٹ 1152 شام کے فضائی حدود میں عراق کے ساتھ عط تنف بارڈر کراسنگ پر تھی جب اسے دو ایف 15 جنگی طیاروں نے روک لیا تو قریب آنے والے جیٹ طیاروں نے اسے تیزی سے راستہ اور بلندی کو تبدیل کرنے پر مجبور کردیا ، نتیجے میں مسافروں میں متعدد زخمی ہوگئے ، ایئر لائن کے نمائندے نے کہا۔

بورڈ میں موجود عینی شاہدین کی ابتدائی اطلاعات میں اسرائیلی طیاروں کے بارے میں بات کی گئی ، اور بین الاقوامی میڈیا کے ذریعہ اس کی تکرار کی گئی۔ فلائٹ 1152 کے کپتان نے بعد میں ایرانی خبر رساں ایجنسی فارس کو بتایا کہ پائلٹوں نے ریڈیو رابطے کے دوران خود کو امریکی فضائیہ کے طور پر شناخت کیا تھا۔

اقوام متحدہ میں ایران کے سفیر ماجد تخت-راونچی نے سیکرٹری جنرل انتونیو گتریس کو واقعے سے آگاہ کیا تھا اور متنبہ کیا تھا کہ اگر تہران واپس جانے والے راستے میں ہوائی جہاز کو کوئی نقصان پہنچا تو "اسلامی جمہوریہ ایران ریاستہائے متحدہ کو ذمہ دار ٹھہرائے گا"۔ ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان سید عباس موسوی کو۔

جمعرات کی شام تک طیارہ بحفاظت تہران واپس آگیا تھا ، لیکن اس واقعے میں سوار کم از کم تین مسافر زخمی ہوگئے تھے۔

شام کی خبررساں ایجنسی کے مطابق ، یہ تعطیل عراق کے ساتھ عط تنف سرحد عبور کے قریب ہوئی۔ امریکہ نے علاقے میں ایک فوجی اڈہ قائم کیا ہے۔

مہان ایئر نجی ملکیت میں ایرانی شہری شہری ہے۔ اسلامی انقلابی گارڈز کور (IRGC) کے ل troops فوج اور سامان کی نقل و حمل کے لئے دسمبر 2019 میں اسے "بڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کے پھیلانے والوں اور ان کے حامیوں" کے خلاف امریکی پابندیوں کی فہرست میں رکھا گیا تھا۔

#تعمیر نو کا سفر

پرنٹ چھپنے، پی ڈی ایف اور ای میل
>